آئی ایس پی آر سے سوال پوچھنے پر پشتون ایکٹوسٹ لاپتہ

نیوز ڈیسک(ریپبلکن نیوز) پاکستانی فوج کے تعلقات عامہ( آئی ایس پی آر) سے سوال پوچھنے پر پشتون ایکٹوسٹ کو جبری طورپر لاپتہ کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر عبد الحئ پشتین کو پاکستانی خفیہ اداروں کے اہلکاروں نے جبری طورپر لاپتہ کردیا ہے اور انکے ٹویٹر اکاونٹ کو بھی بند کردیا گیا ہے۔

عبد الحئ پشتین پیشے سے سائیکلوجسٹ ہے جس نے فورسز کی چیک پوسٹوں پر تلاشی کے دوران بزرگوں اور عورتوں کے بے حرمتی کرنے پر ڈی جی آئی ایس پی آر کو ٹویٹر پر مخاطب ہوتے ہوئے لکھا ” پیارے ڈی جی آئی ایس پی آر کیا آپ دنیا کو بتا سکتے ہیں کہ ان چیک پوائنٹوں سے اب تک کیتے دہشتگردوں کو گرفتار کیا گیا ہے؟ یا صرف ہماری عورتوں، بررگوں اور بچوں کو بے عزت کیا جاتا ہے؟

ڈاکٹر عبد الحئ پشتین کی اس ٹویٹ میں انہوں نے ڈی جی آئی ایس پی آر اور ہیومن رائٹس واج کو ٹیگ کیا تھا، جس کے چند گھنٹوں بعد ڈاکٹر عبد الحئ پشتین کو جبری طورپر لاپتہ کردیا گیا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button
error: پوسٹ کو شیئر کریں