ایک بستی میں تیرہ مسجد اور تیرہ امام | ریپبلکن نیوز | ریپبلکن نیوز

کوئٹہ/ مضمون (ریپبلکن نیوز) پاکستان سے ہر باشعور شخص جس میں قومی غیرت ہو نفرت کرتا اور اپنا دشمن سمجھ سکتا ہے. پاکستان ریاست نے ظلم کی حدیں پار کی ہیں لوگوں کی شھادت اغوا جنسی زیادتیاں ظلم جبر اور استحصال زمین زبان ثقافت چھین لی ہے اس کے خلاف آزادی کے حصولوں کی خاطر ہزاروں فرزندان وطن نے جان نچھاور کردیئے.

بلوچ قوم کی اس تحریک نے کافی پزیرائی حاصل کی ہے جیسے بین الاقوامی دنیا میں بلوچ کی آزادی کی حمایت بھی کی گئی قومی تحریک کو لیڈر لیڈ کرتا رہا قوم کا ایک ہی لیڈر ہوتا ہے.

جو ملکی اور بین الاقوامی سطح پر رائے ہموار کرسکتا ہے بدقسمتی سے بلوچ قوم کو ابھی تک ایسی لیڈر نصیب نہیں ہوا تیرہ تنظیم اور تیرہ لیڈران روزبروز تنظیموں کو تھوڑ کر نیا تنظیم کا اضافہ کیا جارہاہے قوم کو مایوسی میں مبتلا کیا آخر کیا وجہ ہے حقیقی لیڈر کون ہے دنیا بھی ان پر بروسہ نہیں کرتا انتشار اختلافات بد اعتمادی جنم لے رہی ہے. یہ دشمن کی سازش اور کامیابی ہے. جب تک اتحاد واتفاق نہیں ہونگے دنیا اور قوم کا بھروسہ بحال نہیں ہوگا بداعتمادی اختلافات بڑھے گی.

تنظیم اور پارٹیوں میں جب تک احتساب نہیں ہوگا کرپشن حانہ جنگی کی احتمال ہوگی تنظیم کا ممبر یا کسی عہدیدار غلطی کرے ایک بے گناہ عوام کو تکلیف دے مال مڈی ذاتی خواہشات یا منشیات کا دھندا میں مبتلا ہو جائے تو بنا سبوت کسی کو مخبری کے نام پر قتل کرے تو احتساب سے بچنے سے دوسری تنظیم کا رخ کرے گا دوسرا تنظیم انکو پناہ دے سکتاہے اسطرح کے اعمال سے قوم مایوسی کا شکار ہوگا کیونکہ قومی تنظیموں کا مقصد قومی آزادی ہے ایک ڈسپلین کی پابندی قوم کی جان مال عزت کو تحفظ دینا ہے

جب پارٹی ممبر ڈسپلین کو روندھتے ہوئے منشیات فروشی مال بھٹورنے قوم کو تکلیف دینے شک کی بنیاد پر کسی کو قتل کرے تو اس ریاستی غنڈوں اور وطن پہازوں سرمچاروں میں کوئی فرق نہیں قوم مایوس بداعتمادی کا شکار ہوکر بکھر جائے گا آزادی کی مقصد کو نقصان خانا جنگی اور دشمن کو فائدہ پہنچے گا دشمن فائدہ اٹھاتے ہوئے قوم کو آزادی پسندوں کے مقابلے میں کھڑا کرے گا جب تک بلوچ قوم ایک ہی پارٹی اور پلیٹ پارم میں جمع ایک ہی جھنڈے تلے اتحاد نہیں ہوگا ایک ہی لیڈر پر اعتماد نہیں کرے گا تو حصول آزادی مشکل ہے حدارا آپسی اختلافات کو بھلاکر ایک پارٹی اور ایک ہی لیڈر پر اعتماد کرکے دشمن کو ناکام بنائیں.

تحریر: متین بلوچ

نوٹ: درج بالا خیالات مصنف کی اپنی رائے ہے ریپبلکن نیوز اور اسکی پالیسی کا مضمون یا لکھاری کے موقف سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button
error: پوسٹ کو شیئر کریں