بلوچستان بار کونسل نے طلبا مارچ میں نظمی کے واقعے کو توڑمروڑ کر پیش کیا ہے۔ بی ایس او

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز) بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کوئٹہ زون کے ترجمان نے بلوچستان بار کونسل کے جانب سے گذشتہ روز طلباء مارچ میں بدنظمی سرکاری تنظیموں کی بزور طاقت ریلی کو سبوتاژ کرنے والوں کے حوالے سے یک طرفہ بیان حقائق کو توڑ موڑ کر پیش کرنے کو چند عناصر کی بار کونسل کے ساتھ غیر سنجیدگی قرار دیتے ہوئے کہا یے کہ بار کونسل میں چند لوگ بلوچستان کے اہم ادارے کو متنازع بنا کر طلباء سیاست کے خلاف استعمال کررہے ہیں۔

بلوچستان بار کونسل بلوچستان بھر کے وکلاء کی آئینی ادارہ ہے اگر ایسے اداروں کو طلباء سیاست کو کمزور کرنے الزام تراشیوں کے لئے استعمال کی جائے گی تو اسکے اثرات ادارے پر عوامی بلخصوص طلباء و طالبات پر منفی ہونگے اور لوگوں کو اعتماد بارکونسل سے اٹھ جائے گا انہوں نے کہا ہے بی ایس او نے ہمیشہ وکلاء برادری کے تمام مشکلات میں ساتھ دیا تمام ایشوز بلخصوص 8 آگست کے شہداء کے فکر کو آگے بڑھانے کے لئے جدوجہد کی ہے۔

حالیہ ایک مخصوص گروہ تنظیم کے کارکنوں پر حملہ آور ہوا جنکا کسی تعلیمی ادارے یا طلباء تنظیم کے یونٹ سے تعلق تک نہیں محض این جی اوز کی فنڈز بٹورنے کے لئے بنائی گئی ہے جسے صورت برداشت نہیں کی جاسکتی کہ بی ایس او کے مقدص جھنڈے اور نام کا استعمال کرے بی ایس او بلوچستان بار کے سینئر اراکین اور وکلاء قیادت سے اپیل کرتی ہے کہ بجائے طلباء سیاست کے تقسیم کی حوصلہ افزائی کرے کہ کسطرح ایک بیرونی ٹولہ دوسرے تنظیم کا نام استعمال کرسکتی اس سلسلے میں بی ایس او کوئٹہ زون کے سینئر دوستوں کے وفود حقیقی ترقی پسند قوتوں اور وکلاء برادری کو صورتحال سے آگاہ کرے گی۔

مزید خبریں اسی بارے میں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: پوسٹ کو شیئر کریں