جرمنی میں بلوچ مظاہرین اور پاکستان قونصلیٹ کے اہلکاروں اور پنجابی مظاہرین کے درمیان شدید نعرے بازی

فرانکفرٹ(ریپبلکن نیوز) بزرگ بلوچ رہنما نواب اکبر خان بگٹی کی بہمانہ قتل کے خلاف بلوچ ریپبلکن پارٹی کی جانب سے 26اگست کو جرمنی کے شہر فرانکفرٹ میں ہونے والے احتجاجی مظاہرے میں بلوچ مظاہرین اور جرمنی میں مقیم پاکستانی شہریوں اور پاکستان قونصلیٹ کے اہلکاروں کے درمیان شدید نعرے بازی۔

تفصیلات کے مطابق 26اگست کو بی آر پی جرمنی چیپٹر کی جانب سے جرمنی کے شہر فرانکفرٹ میں جرمن قونصلیٹ کے باہر ایک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں جرمنی میں مقیم بلوچوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کیا۔

اسی دوران پاکستانی قونصلیٹ کی جانب سے بلوچوں کے مظاہرے کو کاونٹر کرنے کے لیے قونصلیٹ کے احاطے میں بھی بلوچوں کے خلاف نعرے بازی کی گئیں جس میں پاکستانی قونصلیٹ کے اہلکاروں اور جرمنی میں مقیم پنجابی باشندے اس قدر گر گئے کہ آخر میں گالم گلوچ پر اتر آئے اور نازیبا الفاظ کا استعمال کیا۔

بی آر پی کے مظاہرے میں شامل بلوچوں کی طرف سے پنجابیوں کے اس رویے کے خلاف شدید ردِ عمل کا مظاہرہ کیا گیا اور پاکستانی فوج، آئی ایس آئی اور پنجابی سامراجیت کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئیں۔

مظاہرین نے پاکستانی فوج اور آئی ایس آئی کو دہشتگرد کہا اور فوجی مظالم اور دہشتگردی کے خلاف بھرپور نعرے بازی کیں، اس دوران مظاہرے میں پشتون بھی موجود تھے جنہوں نے فوج کے خلاف شدید نعرے بازی کیں اور فوجی اداروں کو دہشتگرد قرار دیا۔

مظاہرے کے دوران متعدد مرتبہ بلوچ مظاہرین اور قونصلیٹ میں موجود پنجابی مظاہرین کے درمیان تصادم کی نوبت آئی جسے جرمن پولیس نے ناکام بنایا اور مظاہرین کو پُرامن رہنے کی ہدایت کیں، جبکہ اس دران بڑی تعداد میں پولیس اہلکار موجود تھے جنہوں نے کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے نے لیے پہلے سے ہی انتظامات کر رکھے تھے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button
error: پوسٹ کو شیئر کریں