صوبائی دارلحکومت کوئٹہ میں گیس غایب، لوگ لکڑیاں جلانے پر مجبور

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز) صوبائی درالحکومت کوئٹہ میں کے اکثر علاقوں سے گیس غائب بجلی کی آنکھ مچولی کا سلسلہ جاری ہے سوئی گیس کی جانب سے پریشر میں کمی کے باعث گھریلو صارفین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

، شہر کے اکثر علاقوں میں رات گئے تک سوئی گیس بالکل غائب رہتی ہے خواتین تہجد کے وقت کھانا پکانا پڑرہا ہے۔جبکہ طلباء وطالبات تعلیمی اداروں اور ملازمین دفاتر میں بغیر ناشتہ کیے جانے پر مجبور ہیں عوامی حلقوں کے مطابق طویل عرصے سے گیس کی پریشر میں کمی سے مشکلات درپیش ہیں اس سلسلے میں متعدد بار متعلقہ محکمے کے افسران کو شکایات درج کرائی گئیں مگر کوئی ازالہ نہیں کیا جارہا ہے۔

دوسری جانب موسم سرما کے آغاز کے ساتھ ہی گیس کمپنی کے بھاری بل اور کم پریشر کا سلسلہ شروع ہوگیا۔عوامی حلقوں نے اعلیٰ حکام سمیت متعلقہ ذمہ داروں سے نوٹس لینے کامطالبہ کیا ہے۔کوئٹہ میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ بے بھی معامولات زندگی متاثر کررکھی ہے۔

اکثر علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ تبدیل کرکے 12 سے 14 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔ شہریوں نے کہا کہ سردی کی شدت میں اضافہ سے گیس پریشر میں کم ہونا تو سمجھ آتی ہے مگر بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سمجھ سے بالا تر ہے انہوں نے حکام بالاسے 12 سے 14 گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ کے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button
error: پوسٹ کو شیئر کریں