گوادر حملے میں شامل ایک مزاحمتکار آج 12 بجے تک ریاستی فورسز کا مقابلہ کرتا رہا

گوادر (ریپبلکن نیوز) گوادر کے فائیو اسٹار پرل کانٹینینٹل ہوٹل پر گزشتہ دن ہونے والا حملہ آج صبح تک جاری رہا، کل خبریں گردش کررہی تھیں کہ تمام حملہ آور شہید ہوچکے ہیں لیکن آج صبح ہوٹل میں ایک بار پھر سے فائرنگ اور دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔

ہمارے نمائندے نے اس حوالے سے مسلح تنظیم کے ایک سینیئر کمانڈر سے رابطہ کیا اور اس صورتِ حال کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے کہا کہ کل آخری بار جن دوستوں سے رابطہ ہوا تھا انکی گولیاں اور گولہ بارود ختم ہوچکے تھے جس پر انہوں نے کہا کہ وہ اپنی آخری گولی سے خود کو شہید کردینگے۔ لیکن اُس وقت تک ایک دوست ایسا بھی تھا جو ربطے میں نہیں تھا کیونکہ حملے کے کچھ گھنٹے بعد نیٹورک بند کردیا گیا تھا۔

اِس صورتِ حال سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ایک مزاحمتکار آج 12 بجے تک ہوٹل میں موجود تھا اور ریاستی فورسز کا مقابلہ کررہا تھا۔ لیکن تازہ صورتِ حال کے مطابق ہوٹل میں موجود چاروں مزاحمتکار اب شہید ہوچکے ہیں۔ بلوچ مزاحمتکاروں نے پی سی ہوٹل کے متعدد کمروں کو بھی تباہ کردیا ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button