700 ارب کے نئے ٹیکسز، اداروں کی نجکاری اور ۔۔۔ آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ آخری مراحل میں داخل ہوگیا

اسلام آباد (ریپبلکن نیوز) آئی ایم ایف اور حکومت پاکستان کے مابین قرضے کا معاہدہ حتمی مرحلے میں داخل ہوگیا ہے جس کے تحت 700 ارب سے زائد کے نئے ٹیکسز لگائے جائیں گے اور خسارے میں چلنے والے اداروں کی نجکاری کی جائے گی۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان اور آئی ایم ایف کے مابین معاہدے کی منظوری آخری مراحل میں داخل ہوگئی ہے جس کی کل (10 مئی کو) باضابطہ منظوری دے دی جائے گی۔ آئی ایم ایف اور پاکستان کے مابین 3 سالہ پروگرام طے کیا جائے گا جس کے تحت پاکستان کو 7 سے 8 ارب ڈالر کا قرضہ فراہم کیا جائے گا۔

معاہدے کی شرائط کے مطابق حکومت پاکستان یکم جولائی سے 700 ارب روپے سے زائد کے اضافی ٹیکسز عائد کرے گی ۔ بجلی کی قیمتوں میں دو مراحل میں اضافہ کیا جائے گا اور پہلے مرحلے میں یکم جولائی سے بجلی کی قیمتیں بڑھائی جائیں گی جبکہ دوسرے مرحلے میں گیس کی قیمتوں میں بھی اضافہ کیا جائے گا۔

معاہدے کے تحت پاکستان کا ترقیاتی بجٹ گزشتہ برس کی سطح پر منجمد کردیا جائے گا جبکہ خسارے میں چلنے والے اداروں کی نجکاری کی جائے گی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کرنسی ایکسچینج ریٹ طے کرنے میں سٹیٹ بینک کو خود مختاری دی جائے گی جبکہ بجٹ خسارہ بھی کم کیا جائے گا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button
error: پوسٹ کو شیئر کریں