ریپبلکن نیوز

  • مارچ- 2020 -
    29 مارچ
    Photo of جہاں ہر گھر میں مگرمچھ ہیں

    جہاں ہر گھر میں مگرمچھ ہیں

    براعظم افریقہ میں بہنے والا دریائے نیل جہاں دنیا کے طویل ترین دریاؤں میں اپنی منفرد شہرت رکھتا ہے، وہیں…

    تفصیل پڑھیں
  • 29 مارچ
    Photo of سائنسدانوں نے اینٹوں کو گیما شعاعیں پہچاننے والےکیمروں میں تبدیل کردیا

    سائنسدانوں نے اینٹوں کو گیما شعاعیں پہچاننے والےکیمروں میں تبدیل کردیا

    امریکی سائنسدانوں نے ایک خاص ٹیکنالوجی کے ذریعے اینٹوں میں جذب تابکاری کا سراغ لگایا ہے۔ فوٹو: فائل نارتھ کیرولائنا: اب…

    تفصیل پڑھیں
  • 29 مارچ
    Photo of دنیا کا سب سے مہنگا لیموں، قیمت 45 ہزار روپے فی کلو

    دنیا کا سب سے مہنگا لیموں، قیمت 45 ہزار روپے فی کلو

    تصویر میں دکھائی دینے والا پھل لیموں کی نسل کا ہے جو دنیا کا سب سے مہنگا لیموں بھی ہے۔…

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of پاکستان نے سینکڑوں ہوٹل عارضی قرنطینہ مراکز میں تبدیل کر دیے

    پاکستان نے سینکڑوں ہوٹل عارضی قرنطینہ مراکز میں تبدیل کر دیے

    ویب ڈیسک —  صحت عامہ کی دیکھ بھال کے ابتر نظام میں فوری بہتری لانے کے اقدام کے طور پر…

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of سری نگر: لاک ڈاؤن خلاف ورزی پر گرفتاریاں؛ کووڈ-19 مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ

    سری نگر: لاک ڈاؤن خلاف ورزی پر گرفتاریاں؛ کووڈ-19 مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ

    سری نگر —  بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں کرونا وائرس یا کووڈ-19 سے متاثرہ افراد کی تعداد میں مسلسل…

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of ساجد حسین بلوچ کی زیابی کے لئے سویڈش گورنمنٹ اور عالمی ادارے کردار ادا کریں۔ بی این ایم

    ساجد حسین بلوچ کی زیابی کے لئے سویڈش گورنمنٹ اور عالمی ادارے کردار ادا کریں۔ بی این ایم

    پ ر (ریپبلکن نیوز) بلوچ نیشنل موومنٹ کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر مراد بلوچ نے کہا ہے کہ سویڈش حکومت، صحافتی اور انسانی حقوق کے عالمی ادارے سینئر بلوچ صحافی اور دانشور ساجد حسین کی بازیابی کے لئے کردار ادا کریں۔ وہ دو مارچ کی دوپہر سے لاپتہ ہیں اور ان کا کسی سے کوئی رابطہ نہیں۔    ڈاکٹر مراد بلوچ نے کہا کہ نوجوان صحافی ساجد حسین بلوچستان کے مایہ ناز صحافی ہیں۔ وہ پاکستان کے معروف انگریزی جرائد ”دی نیوز انٹرنیشنل“ اور ”ڈیلی ٹائمز“میں بطور اسسٹنٹ نیوز ایڈیٹر اور ڈپٹی سٹی ایڈیٹر کام کرچکے ہیں۔ بلوچستان میں صحافی برادری اور سیاسی کارکنوں کا فوجکے ہاتھوں گمشدگی اور قتل کے بعد، انہوں نے سویڈن میں سیاسی پناہ حاصل کی۔ وہاں سے بلوچستان سے متعلق حقائق کو دنیا کے سامنے لانے کے لئے ساجد حسین نے ”بلوچستان ٹائمز“ کے نام سے انگلش اور بلوچی زبان میں ویب سائٹ کا اجراء کیا۔ وہ چار سالوں سےسویڈن کے شہر اسٹاک ہوم میں مقیم ہیں اور اپسالہ  یونیورسٹی میں بلوچی زبان میں ماسٹرز ڈگری کیلئے تعلیم بھی حاصل کررہے ہیں۔ اسی سلسلے میں وہ دو مارچ کو سویڈن کے شہر اپسالہ منتقل ہوئے۔  اسی دن یعنی دو مارچ کے بعد ان سے رابطہ منقطع ہوا اور اس کی اطلاع مقامیپولیس اور متعلقہ اداروں کو دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ساجد حسین بلوچ نیشنل موومنٹ کے بانی صدر شہید چیئرمین غلام محمد بلوچ کے بھانجا ہیں۔ بلوچستان میں سیاسی لیڈرشپ اور جہدکاروں کے رشتہ داروں کو ہمیشہ ریاستی جبر وبربریت کا سامنا رہا ہے۔ بی این ایم اسے ”اجتماعی سزا“ قرار دیتا ہے۔ ساجد بلوچایک انقلابی پارٹی کے بانی کے خاندان سے تعلق رکھنے کے علاوہ صحافتی حلقوں میں ایک نمایاں نام ہیں۔  انہوں نے بلوچستان میں انسانی المیے کو دنیا کے سامنے لانے کے لئے قابل قدر خدمات انجام دیئے ہیں۔  وہ بلوچستان ٹائمز میں انگریزی اور بلوچی زبان میں خود تحریر کر رہےہیں اور دوسرے مضامین شائع کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ ادارہ ایک ریڈیو چینل بھی چلا رہا ہے اور بلوچ قوم کی دبی آواز کو سامنے لارہا ہے۔ ان کی پراسرار گمشدگی نے ہمیں گہرے صدمے سے دوچار کیا ہے۔ ہم اس تشویش میں مبتلا ہیں کہ ساجد حسین کی گمشدگی میں آئی ایسآئی ملوث نہ ہو۔ ڈاکٹر مراد بلوچ نے کہا کہ بلوچستان میں سیاسی و انسانی حقوق کی صورت حال گزشتہ دو دہائیوں سے انتہائی ابتر ہو چکی ہے۔ ہزاروں لوگ قتل اور ہزاروں زندانوں میں بند ہیں۔  اس وحشت ناک بربریت سے بچنے کے لئے ہزاروں بلوچ سیاسی کارکن یورپی ممالک میں پناہ حاصلکرنے پر مجبور ہوچکے ہیں۔ ان میں انسانی حقوق کے کارکن اور صحافی بھی شامل ہیں۔ ساجد حسین کی گمشدگی نے بیرونی ممالک میں سیاسی پناہ گزین کارکنوں کو ذہنی پریشانی میں مبتلا کیا ہے۔ وہ ممالک جو اپنے انسانی حقوق و اقدار کے تحفظ پر فخر کرتے ہیں وہاں ایک صحافی کیگمشدگی نے بے شمار سوالات کو جنم دیاہے۔ انہوں نے سویڈش حکومت، انسانی حقوق و صحافتی اداروں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ ساجد حسین کی بحفاظت بازیابی کے لئے کردار کریں۔

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of بھارت: ریل کی بوگیوں میں قرنطینہ مراکز کھولے جا رہے ہیں

    بھارت: ریل کی بوگیوں میں قرنطینہ مراکز کھولے جا رہے ہیں

    ویب ڈسک —  گرچہ بھارت میں کرونا وائرس کے تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد ایک ہزار سے کم ہے، لیکن…

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of آزادی

    آزادی

    سمیر بلوچ نیم غنودگی کی حالت میں بادائم یہ سوچ لیتا خواہ وہ آزاد ہے یا نہیں. اگر ہے تو…

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of بھارت میں لاک ڈاون: مزدور پیدل آبائی ریاستوں کو روانہ

    بھارت میں لاک ڈاون: مزدور پیدل آبائی ریاستوں کو روانہ

    واشنگٹن —  بھارت کے معروف صحافی اور اخبار ‘ملی گزٹ’ کے ایڈیٹر، ڈاکٹر ظفر علی خان نے کہا ہے کہ…

    تفصیل پڑھیں
  • 28 مارچ
    Photo of کرونا وائرس اور فرقہ وارانہ تھیوریز

    کرونا وائرس اور فرقہ وارانہ تھیوریز

    اسرار خان بلوچ کرونا وائرس اس وقت تقریباً 178 ملکوں تک پھیل چکا ہے۔ 22 ہزار لوگوں کو موت کے…

    تفصیل پڑھیں
Back to top button
error: Content is protected !!